Web Analytics
تازہ ترین خبر
ہوم / ممالک / آسٹریلیا / ورلڈکپ’15ء کے بعد فتوحات میں کون آگے؟

ورلڈکپ’15ء کے بعد فتوحات میں کون آگے؟

ورلڈکپ 2015ء کے بعد صرف جنوبی افریقی ایسی ٹاپ ٹیم ہے جس نے شکستوں کے بدلے دوگنی فتوحات حاصل کی ہیں ،جس نے اس عرصے میں کھیلے گئے 38ون ڈے میچوں میں 12 شکستوں کے بدلے 25میچز جیت کر2.083کا فتح و شکست تناسب پایاہے جو اس عرصے میں کسی بھی ٹیم کا بہترین تناسب ہے ۔جس کے بعد اگلے نمبروں پر انگلینڈ اور آسٹریلیا بالترتیب 1.92اور 1.56کے تناسب کے ساتھ موجود ہیں۔

ان ٹاپ تین ٹیموں کے بعد چوتھے نمبرپر حیران کن طورپر بنگلہ دیش موجود ہے جس نے 1.50کے تناسب سے 27ون ڈے میچوں میں سے 25کامیابیوں کے بدلے صرف دس میچوں میں شکستیں کھائی ہیں۔’ایشین ٹائیگرز‘کے اس قدر اچھے ریکارڈکی وجہ اُس کے ہوم گرائونڈزپر مسلسل میچز ہیں جہاں اُس نے لگاتار تین سیریز میں پاکستان،بھارت اور جنوبی افریقہ کو دھول چٹاکر سیریز اپنے نام کی تھیں۔اس لئے اس عرصے میں جب بنگلہ دیش کے ملک سے باہر ’’نتائج‘‘پرنگاہ ڈالتے ہیں تو ایشین ٹائیگرزکے نام سے جانے جانیوالے کھلاڑی ’’کاغذی شیر‘‘ دکھائی دیتے ہیں۔

اس عرصے میں جن ٹاپ ٹیموں کو فتوحات سے کہیں گنازیادہ شکستیں نصیب ہوئی ہیں، اُن میں ویسٹ انڈیزاورزمبابوے کے علاوہ سری لنکا اور پاکستان کی ٹیمیں شامل ہیں جن میں سے پہلی دو ٹیمیں آٹھویں چیمپئنز ٹرافی کیلئے کوالیفائی ہی نہیں کرسکیں ۔یہی وجہ ہے کہ حالیہ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں مداحوں اور ماہرین کودیگر دو ٹیموں (پاکستان اور سری لنکا)سے بہت زیادہ اُمیدیں بھی وابستہ نہیں ہیں۔

یہ چند پیراگراف ’اسپورٹس لنک‘ کے ’’ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی2017ء ایڈیشن‘‘ سے لئے گئے ہیں ۔ اعدادوشمار کے اعتبار سے چیمپئنز ٹرافی کی فیورٹ ٹیموں کے جائزے،ٹورنامنٹ میں شامل 120 کرکٹرزکے ون ڈے کیریئر اور انگلینڈمیں کارکردگی کے جائزے سمیت دیگر تمام تر معلومات اس خاص ایڈیشن میں ملاحظہ کی جاسکتی ہیں (مزید تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے