Web Analytics
تازہ ترین خبر
ہوم / Cricket Ranking News / پاکستان کی چھٹی،بھارت کی پہلی پوزیشن خطرے میں

پاکستان کی چھٹی،بھارت کی پہلی پوزیشن خطرے میں

پاکستان کرکٹ ٹیم اس وقت آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی جیتنے کے بعدساتویں آسمان پر موجود ہے جس کے کھلاڑی تماشائیوںاور اعلیٰ حکام سے دادوانعام وصول کررہے ہیں لیکن آنے والے چند دن اُنہیں رُلابھی سکتے ہیںکیونکہ اگر سری لنکا نے بھارت کے خلاف ہوم سیریزمیں بھارت کوجیتنے نہ دیا تو وہ پاکستان کی چھٹی پوزیشن پر قبضہ جمالے گی۔

پاکستان میں کھیلوں کے سرفہرست میگزین ’’اسپورٹس لنک‘‘ کے مطابق آنے والے دنوں میں پاکستان اور بھارت دونوں روایتی حریفوں کی ٹیسٹ رینکنگ پوزیشنزخطرے میںآجائیں گی۔ 26جولائی سے شروع ہونے والی بھارت اور سری لنکا کے درمیان ٹیسٹ سیریزمیں اگرمیزبان آئی لینڈرزنے اچھا کھیل پیش کردیاتوٹیسٹ رینکنگ میں بھارت پہلی اور پاکستان چھٹی پوزیشن سے محروم ہوجائے گا۔

عالمی نمبرون بھارت کو اپنے موجودہ123 پوائنٹس برقرار رکھنے کیلئے92پوائنٹس کے ساتھ ٹیسٹ درجہ بندی میں ساتویں نمبرپر موجود آئی لینڈرزکے خلاف سیریز میں کم ازکم دو میچوں کے مارجن سے فتح حاصل کرنا ہوگی یعنی2-0 سے کامیابی حاصل کرنا ہوگی بصورت دیگر اُسے ایک پوائنٹ گنوانا پڑے گا یعنی ایک صفرسے کامیابی بھی اُس کا ایک پوائنٹ کم کردے گی ۔

ساتویں نمبرپر موجود سری لنکا کاچھٹے درجے کی پاکستانی ٹیم سے فی الوقت صرف ایک پوائنٹ کا فرق موجودہے اس لئے پاکستانی شائقین یہی چاہیں گے کہ سری لنکا اس سیریزمیں کامیابی حاصل نہ کرے وگرنہ پاکستانی ٹیم کو سری لنکا کیلئے چھٹی پوزیشن خالی کرنابھی پڑسکتی ہے۔

اگر سری لنکن ٹیم یہ سیریز1-1یا0-0 سے ڈرا کرنے میں کامیاب ہوگئی تو وہ دوپوائنٹس حاصل کرکے پاکستان کی جگہ چھٹے نمبرپر آجائے گی جبکہ پاکستان ٹیم کو ساتویں نمبرپرجانا پڑے گا۔

اس طرح اگر سری لنکا کم ازکم ایک صفرکے مارجن سے ہی یہ ہوم سیریز جیتنے کی’’انہونی‘‘ کردے تو وہ ملنے والے پانچ پوائنٹس کی بدولت پاکستان اور نیوزی لینڈکو نیچے دھکیلتے ہوئے پانچویں درجے کی مالک بن سکتی ہے۔اس صورت میں بھارت کو ایک درجہ تنزلی کا سامنا کرنا پڑے گاجوکم درجے کی ٹیم سے سیریز ہارنے کی صورت میں سات پوائنٹس گنواکر116پوائنٹس کے ساتھ دوسرے نمبرپر آجائے گی جبکہ جنوبی افریقہ117پوائنٹس کے ساتھ ٹاپ پر آجائیگا۔

اگرسیریزمیں دو،صفر سے کامیابی سری لنکاکو انگلینڈکی جگہ چوتھے درجے پر بھی براجمان کراسکتی ہے تاہم ایسا ہونا تقریباً ناممکنات میں سے ایک ہے۔اس طرح سیریزمیں کلین سوئپ سری لنکا کو تیسرے درجے کا مالک بھی سکتا ہے یعنی فتح کے مارجن کے ہرمیچ کے ساتھ اُس کا ایک درجہ بھی بڑھ سکتا ہے۔دوسری سیریزمیں کلین سوئپ کھاکر بھی بھارت دوسرے نمبرپر رہے گی۔

نوٹ: بھارت اور سری لنکا کی سابقہ ٹیسٹ سیریز، 2016ء سے کارکردگی کا موازنہ ’’اسپورٹس لنک‘‘ میگزین میں ملاحظہ کریں

یہ متعلقہ مواد بھی پڑھیں

تازہ رینکنگ جاری،مصباح الحق اور بابراعظم کی ترقی

پاکستان اور ویسٹ انڈیزکے درمیان کنگسٹن میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ میچ کے اختتام پر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے